Most Interesting Facts About Dubai Woman Jail In Urdu

Interesting Facts

Most Interesting Facts About Dubai Woman Jail In Urdu.



دبئی اس وقت پوری دنیا میں سیاحت کا بہترین مقام بن چکا ہے جہاں پوری دنیا سے لوگ گھومنے کے لیے آتے ہیں. سیاحت کے علاوہ دبئی میں کام کا رجحان بھی کافی زیادہ ہے جس کی وجہ سے مختلف ممالک سے لوگ یہاں کام کے لیے آتے ہیں جن میں خواتین بھی شامل ہوتی ہیں. اور اکثر اوقات یہاں پر آنے کے بعد لوگوں کو جیل کی ہوا بھی کھانی پڑتی ہے. کیونکہ دبئی میں چند ایسے قوانین ہیں جس سے کوئی بھی انسان جانے انجانے میں توڑ سکتا ہے جس کی وجہ سے اس سے جیل جانا پڑتا ہے ویسے تو دنیا کی ہر جیل میں آپ نے قیدیوں کے ساتھ برے سلوک کی خبریں تو سنی ہوگی آج کی اس ویڈیو میں میں آپ کو دبئی کی جیل میں خواتین کے ساتھ ہونے والے سلوک کے بارے میں
بتاؤں گا تو چلے دوستوں ویڈیو شروع کرتی ہیں.




دبئی میں خواتین کے لئے سب سے بڑی جیل الاریب ہے اس جیل میں آنے والی خواتین سے کوئی بڑا گناہ نہیں ہوا ہوتا بلکہ ایک عام سا قانون توڑا گیا ہوتے ہیں جو ان کے ملک میں ایک عام سی بات ہوتی ہے. اس بات کی تحقیق تب ہوئی جب انگلینڈ سے آئی ایک عورت نے نے پبلک ہوٹل میں بیٹھے اپنے شوہر کے گال پر کس کر لیا جو کہ ان کے ملک میں عام سی بات تھی جس کی وجہ سے اس عورت کو 23 دنوں کے لیے جیل میں ڈال دیا گیا. اس عورت نے باہر آکر بتایا کہ جیل میں عورتوں کو بات چیت کرنے کے لئے ایک مخصوص ٹائم دیا جاتا تھا اس کے بعد عورتوں کو آپس میں بات کرنے کی اجازت نہیں دی جاتی تھی. جب اس سے کھانے کا پوچھا گیا تو اس نے بتایا کے اس جیل کے کھانے کا ذائقہ انتہائی گھٹیا تھا. اس جیل کی دروازوں کو لاک نہیں لگائے جاتے تاکہ خواتین گم پھر سکے اور ایک دوسرے سے باتیں کرسکیں. اس جیل میں 400 سے زائد خواتین موجود ہیں جن میں سے زیادہ تر بیرون ملک سے تعلق رکھنے والے ہیں. اس جیل کی یونیفارم پنک کلر کی شلوار قمیض ہے اور منہ چھپانے کے لیے ایک کی حیجاب دیا جاتا. دبئی کی اس بڑی جیل میں خواتین کیلئے قرآن کی کلاسسز اور ڈاکٹر کی سہولت بھی موجود ہیں قیدیوں کے بچوں کے لئے یہاں پر پلے گراؤنڈ بی موجود ہے. دوستو آپ کی اس جھیل کے بارے میں کیا رائے ہیں ہمیں نیچے کمنٹ کرکے لازمی پٹائی

Most Interesting Facts About Dubai Woman Jail In Urdu